KASSOWAL NEWS

چیچہ وطنی: مرکز صحت کی بے حسی، خاتون نے رکشہ میں بچی کو جنم دے دیا

کسووال (قلمدان) کسووال دیہی مرکزصحت کاعملہ بے لگام، غریب محنت کش کی بیوی کے ہاں رکشہ میں بچی کی پیدائش، سردی سے زچہ و بچہ شدیدبیمار، پرائیویٹ علاج ومعالجہ کےلئے پیسے نہیں، کہاں جاﺅں؟حکومت وقت مددکرے، محنت کش محمدعمران کی دہائیاں.
تفصیلات کے مطابق کسووال کے نواحی گاﺅں چک نمبر13چودہ ایل کا رہائشی محمدعمران تقریباً3بجے سہ پہر اپنی حاملہ بیوی کوتکلیف کے باعث دیہی مرکزصحت4چودہ ایل کسووال لے کر آیاجہاں پرعملہ نے اسکی بیوی کوداخل کرلیالیکن رات کے وقت ڈیوٹی پرموجودنرسزنے پرچی پریہ بات لکھ کرگھرجانے کوکہاکہ آپکے ہاں بچہ کی پیدائش8دن بعد ہوگی، جس پرمحمدعمران رات تقریباً12بجے اپنی بیوی کوبسواری رکشہ لے کرروانہ ہوا، لیکن چندمنٹ بعد جونہی رکشہ بائی پاس کسووال چھوٹاریلوے پھاٹک کے قریب پہنچاتوسخت سردی میں محمدعمران کی بیوی نے رکشہ میں ہی بچی کوجنم دے دیا.
میڈیاکے نمائندوں سے گفتگودوران محنت کش کاکہناتھاکہ میں محنت مزدوری کے سلسلہ میں پشاورہوتاہوں کمرتوڑمہنگائی کے اس دورمیں تومیراچولہاہی بمشکل چلتاہے پرائیویٹ ڈلیوری کے بھاری اخراجات کیسے برداشت کرتاجسکی وجہ سے میں اپنی بیوی کوسرکاری ہسپتال لایامگرڈیوٹی پرموجودبے رحم عملہ نے بھی مایوسی کے سواکچھ نہ دیا،جبکہ بااثرلوگوں کوپروٹول ملتاہے، میں غریب تھا، میرے لیے توانتظامیہ کے پاس صرف دھکے ہی تھے، میری فریادکون سنتا؟ اب حکومت وقت سے گزارش ہے کہ زچہ وبچہ کے علاج ومعالجہ کےلئے امدادکی جائے اورفوری نوٹس لیکر بے حس عملہ کیخلاف سخت محکمانہ کاروائی عمل میں لائی جائے.
دوسری طرف عوامی وسماجی حلقوں نے بھی اس تشویشناک صورتحال کی شدیدالفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ عوام کے ٹیکسوں سے بھاری تنخواہوں ومراعات کے مفت میں مزے اڑانے والے عملہ کوعوام الناس کی کوئی پرواہ نہیں ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں